وہی ہوا جسکا ڈر تھا، بلوچستان دھماکہ کیوں کرایا گیا؟ غیر ملکی صحافی نے خوفناک دعویٰ کر دیا

0 58

وہی ہوا جسکا ڈر تھا، بلوچستان دھماکہ کیوں کرایا گیا؟ غیر ملکی صحافی نے خوفناک دعویٰ کر دیا ۔۔۔۔۔کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک) بلوچستان اسمبلی کے قریب زرغون روڈ پر ہونے والے خود کش حملے کی ذمہ داری کالعدم تنظیم تحریک طالبان پاکستان نے قبول کر لی ہے۔غیر ملکی صحافی ایف جیفری کے مطابق تحریک
طالبان پاکستان نے کوئٹہ کے علاقے زرغون روڈ پر جی پی او چوک میں ہونے والے خود کش حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے، ٹی ٹی پی کے مطابق یہ حملہ ایک خودکش حملہ آور کے ذریعے کیا گیا ۔واضح رہے کہ کوئٹہ کی زرغو ن روڈ پر جی پی او چوک کے قریب ایک موٹر سائیکل سوار حملہ آور نے پولیس اہلکاروں کو نشانہ بناتے ہوئے خود کو دھماکے سے اڑا لیا ہے ، جس میں پولیس اہلکاروں سمیت متعدد افراد شہید اور زخمی ہوئے ہیں۔ واضح رہے کہ بلوچستان اسمبلی سے 3 سو میٹر کے فاصلے پر کوئٹہ میں جی پی او چوک میں پولیس ٹرک کے قریب بم دھماکہ ہوا ہے ابتدائی طور پر اس بم دھماکے میں 5 پولیس اہلکار شہید جبکہ 15 کے قریب افراد زخمی ہوئے ہیں۔ تمام زخمیوں اور شہدا کو سول ہسپتال کوئٹہ منتقل کردیا گیا ہے۔ اس دھماکے کی وجہ سے پاس سے گزرنے والی ایک بس متاثر ہوئی ہے، دھماکے کے وقت بلوچستان اسمبلی کے اجلاس کی وجہ سے اسمبلی کے اعتراف میں 6 ہزار سیکورٹی اہلکار تعینات تھے، یہ علاقہ کوئٹہ کا ریڈ زون کہلاتا ہے ، جس سے 3 سومیٹر کے فاصلے پربلوچستان اسمبلی ، اس جگہ سے 3 سو گز شمال کی طرف

وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ، چیف سیکرٹری ، بلوچستان ہائی کورٹ اور دیگر اہم سرکاری و غیر سرکاری دفاتر موجود ہیں۔ کوئٹہ کے جی پی او چوک کے قریب پولیس ٹرک کے پاس ایک زور دار دھماکہ ہوا ہے، اس دھماکے سے پاس کھڑی ایک بس بھی متاثر ہوئی ہے۔دھماکے کی آواز دور دور تک سنی گئی جس کی وجہ سے عمارتیں لرز اٹھیں ، دھماکے کے فوری بعد پولیس ، ایف سی اور دیگر سیکورٹی اداروں نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے جبکہ زخمیوں کو قریبی سول ہسپتال میں منتقل کیا جا رہا ہے۔دھماکے کے فوری بعد ریسکیو ٹیمیں جائے وقوع پر بھیج دیا گیا ہے تاہم دھماکے کی نوعیت کا تعین کیا جا رہا ہے۔ جبکہ ڈی سی کوئٹہ فرخ عتیق کا کہنا ہے کہ کوئٹہ میں اسمبلی کے قریب ہونے والے دھماکے میں پولیس وین کو نشانہ بنایا گیا ہے ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق دھماکہ خود کش ہے ،دہشتگرد نے پولیس کی وین کونشانہ بنایا جس کے نتیجے میں اب تک کی اطلاعات تک چا ر افراد شہید اور پندرہ زخمی ہو گئے ہیں۔زخمیوں کو سول ہسپتال منتقل کیا جا رہا ہے جبکہ پولیس اور ایف سی اہلکاروں نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے ۔
(دھرتی نیوز)

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

Comments

Loading...