پیٹ کے جراثیم تھکن کی وجہ قرار

0 25

نیویارک: امریکی ماہرین نے دریافت کیا ہے کہ جو لوگ خود کو عموماً تھکا ہوا محسوس کرتے ہیں وہ کسی دماغی یا ذہنی بیماری کا شکار نہیں ہوتے بلکہ اس کی وجہ ان کے پیٹ میں موجود خاص قسم کے بیکٹیریا ہوتے ہیں۔

کولمبیا یونیورسٹی کے ’’میل مین اسکول آف پبلک ہیلتھ‘‘ میں کی گئی ایک تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ ایسی کیفیت کی وجہ پیٹ میں موجود بعض جرثوموں کی غیرمعمولی مقدار ہوتی ہے جو کھانا ہضم کرنے میں رکاوٹ ڈالنے کے علاوہ ہمارے چاق و چوبند رہنے پر بھی اثر انداز ہوتی ہے۔

ایم ای/ سی ایف ایس کہلانے والی اس کیفیت میں مبتلا افراد کو ہر وقت نیند آتی رہتی ہے یا پھر ان کا دماغ بوجھل رہتا ہے جس کی وجہ سے وہ کسی بھی کام پر توجہ نہیں دے پاتے اور ان کی گھریلو سے لے کر پیشہ ورانہ زندگی تک متاثر ہوجاتی ہے۔ ایسے ہی مریضوں کا تفصیلی معائنہ کرنے اور ہر پہلو سے ان کا جائزہ لینے کے بعد کولمبیا یونیورسٹی کے ماہرین نے بیکٹیریا کی 7 ایسی اقسام دریافت کرلیں جن کے نتیجے میں یہ کیفیت جنم لیتی ہے۔

ان میں فیسالی بیکٹیریم، روزبیوریا، ڈوریا، کوپروکوکس، کلوسٹریڈیئم، ریومینوکوکس اور کوپروبیسی لس اقسام کے بیکٹیریا شامل ہیں جو قدرتی طور پر ہمارے پیٹ میں پائے جاتے ہیں لیکن ایم ای/ سی ایف ایس میں ان کی مقدار بہت بڑھ جاتی ہے جو ہاضمے کے مسائل پیدا کرنے کے علاوہ مستقل تھکن کی وجہ بھی بنتی ہے۔

ریسرچ جرنل ’’مائیکروبایوم‘‘ میں شائع ہونے والی اس رپورٹ میں ماہرین کا کہنا ہے کہ ایم ای/ سی ایف ایس کی وجہ معلوم ہوجانے کے بعد اب وہ اس کیفیت کا علاج دریافت کرنے پر کام کریں گے کیونکہ اس کے باعث لاکھوں لوگوں کی معیشت اور معاشرت، دونوں متاثر ہورہی ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

Comments

Loading...